سونے کی قیمت 5 برس کی بلند ترین سطح پر

ملک بھر میں سونے کی قیمت 58 ہزار روپے فی تولہ سے تجاوز ہوتے ہوئے 5 سال کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی۔

روزنامہ ایکسپریس کے مطابق مقامی سطح پر ڈالر کے مدمقابل روپے کی بے قدری، عالمی سطح پر تجارتی جنگ چھڑنے کے خدشات کی وجہ سے ڈالر پر دباؤ آنے کی وجہ سے سونے کی قیمتوں میں اضافے کی وجہ سے صرف ایک ہفتے کے اندر سونے کی قیمتوں میں پونے 3 فیصد کا اضافہ ہوا ہے جس کے نتیجے میں سونے کی فی تولہ قیمت تقریباً 5 سال کے بعد پہلی بار 58 ہزار روپے سے تجاوز کرگئی۔

قبل ازیں 4 اپریل 2013ء کو سونے کی تولہ قیمت 58 ہزار 300 روپے ریکارڈ کی گئی تھی۔ گزشتہ روز بین الاقوامی بلین مارکیٹ میں فی اونس سونے کی قیمت 18 ڈالر کے اضافے سے 1348 ڈالر کی سطح پر پہنچنے کے باعث مقامی صرافہ مارکیٹوں میں بھی ہفتہ کو فی تولہ اور فی دس گرام سونے کی قیمتوں میں بالترتیب 700 اور 600 روپے کا اضافہ ہوگیا جس کے نتیجے میں کراچی، حیدر آباد، سکھر، ملتان، فیصل آباد، لاہور اسلام آباد، راولپنڈی، پشاور اور کوئٹہ کی صرافہ مارکیٹوں میں فی تولہ سونے کی قیمت بڑھ کر 58 ہزار 200 روپے اور فی 10 گرام سونے کی قیمت بڑھ کر 49 ہزار 885 روپے ہوگئے۔ اسی طرح فی تولہ چاندی کی قیمت 20 روپے بڑھ کر 770 روپے اور فی 10 گرام چاندی کی قیمت 17.15 روپے بڑھ کر 660 روپے ہوگئی ہے۔

عالمی تجارتی جنگ چھڑنے کا خدشہ

واضح رہے کہ ایک ہفتے قبل سونے کی فی تولہ قیمت 56 ہزار 650 روپے تھی تاہم منگل کو روپے کی قدر میں اچانک 5 فیصد کمی ہوئی جس کے نتیجے میں سونے کی قیمتوں میں بھی اضافہ ہوا جبکہ اس کے بعد جمعرات کو امریکی صدر کی جانب سے چینی درآمدات پر ٹیرف لگانے اور اس کے جواب میں چین کی جانب سے امریکی مصنوعات پر جوابی درآمدی ڈیوٹیاں لگنے اور اس کے بعد انتقامی ڈیوٹیوں کا سلسلہ چل نکلنے کے خدشات پر سونے کی طلب اور قیمت بڑھی جس کا اثر مقامی قیمتوں پر بھی ہوا اور اس طرح صرف ایک ہفتے کے اندر سونے کی تولہ قیمت میں 1550 روپے یا 2.74 فیصد کااضافہ ریکارڈ کیا گیا۔

روپے کی بے قدری کے سونے کی قیمتوں پر اثرات کے حوالے سے آل سندھ صراف ایسوسی ایشن کے سربراہ الحاج ہارون رشید چاند کا کہنا ہے کہ اگر روپے کی قدر میں کمی کا سلسلہ جاری رہا تو سونے کی قیمت 60 ہزار روپے تولہ سے بھی تجاوز کرجانے کا خدشہ ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں